Thundan/ September 4, 2017/ Urdu Cheating Wife, Urdu Sex Stories

پاکستانی لڑکی چدانے کے بعد یوں غائب ہوئی جیسے ہاتھی کے سر سے سینگ میں اس کو آج تک نہٰں بھولا نا جانے وہ کہاں گئی مجھے اس بات کی سمجھ نہیں آئی حالانکہ ہماری  کوئی لڑائی بھی نہیں ہوئی تھی لیکن پھر بھی اس نے مجھے اجنبی لوگوں کی طرح چھوڑااور بھلا دیا  ا سکی میں آپکو پوری تفصیل سناتا ہوں کئی سال پہلے کی بات ہے دوستوں میں آج آپکو جس پاکستانی لڑکی کی کہانی سنا رہا ہوں  میں اس کو دل سے پیار کرنے لگا تھاجس پاکستانی بے وفا لڑکی سے میں بہت پیار کرتا تھا  بہت دیوانوں کی طرح پیار کرتا تھا
وہ لڑکی بھی مجھے بہت پیار کرتی تھی  لیکن اس نے میرے ساتھہ کچھ ایسا کیا جو مجھے اس کے ساتھہ سیکس کرنے کی ضرورت پیش آئی  ہم دونوں کی کہانی اسکول سے شروع ہوئی  ہم دونوں ایک ساتھہ ایک اسکول میں پڑھتے تھے  میں اسکو بہت پسند کرتا تھا  میں جب بھی اس پاکستانی بے فا  لڑکی کو کچھ کہتا وہ سنتی ہی نہیں اور مجھے جھاڑ دیتی تھی
لیکن مجھے اس سے پیار تھا میں جب ہی اسکی اتنی باتوں برداشت کرتا تھا  پھر ایک دفعہ ہمارے اسکول میں پارٹی تھی  وہ بھی آئی تھی  میں نے سوچا تھا کے آج تو میں اس سے بات کر کے رہونگا  جب وہ آئی تو بہت پیاری لگ رہی تھی  میں اسکو دیکھتا رہا کچھ دیر تک پھر اس کے پاس جانے کی کوشش کی لیکن مجھے ڈر بھی لگ رہا تھا کے یہ مجھے بذات نہ کر دے  لیکن میں نے اسکا وہاں بہت خیال رکھا جسکی وجہ سے یہ میرے قریب آئی میں نے اسکو وہاں کھانا خود سروے کیا اور اسکو جو کچھ بھی چائے ہوتا میں لا کر دیتا تھا  اسی بہانے سے میں نے اس پاکستانی  بے وفالڑکی کو اپنے دل کی بات کہی تو کہنے لگی میں سوچ کے جواب دونگی  میں نے کہا ٹھیک ہے اور اسکو میں نے اپنا نمبر دے دیا  پھر میں رات کو اسکا بہت انتظار کرنے لگا  مجھے امید تھی وہ لازمی کال کرے گی
اچانک رات بارہ  بجے کسی کی مس کال آئی میرے نمبر پہ  میں سمجھا یہی ہوگی  میں نے جواب میں  کال کی تو یہی تھی  پھر میں نے اس سے بات پھر سے شروع کر دی  اس رات ہم دونوں نے بہت باتیں کی  دھیرے دھیرے ہم کافی فری ہو گئے  اور بات چیت سیکس کے موضوع پہ چلی گئی پھر ہم دونوں ملتے بھی تھے بہت  اس طرح اسکو مجھ سے پیار ہو گیا  مجھے تو پہلے سے ہی بہت پیار تھا
میں اسکو کبھی شاپنگ پہ لے کر جاتا کبھی کہیں  پھرایک بار میں اسکو اپنے دوست کے فلیٹ میں لے گیا  وہاں ہم دونوں کا رومانس کرنے کا دل چاہا تو میں نے اسکی اجازت لی  ا سکا بھی دل سیکس پہ تھا سو ہم نے خوب انجوائے کرنے کا سوچااور اس نے مجھے اجازت دے دی  پھر ہم دونوں نے اس کو کسسنگ کرنا پھر سے شروع کی اس کے بعد میں اسکو بیڈ روم لے گیا اس کا چکنا جوان بدن میری بانہوں میں تھا
وہاں لے جا کر میں نے اسکو بیڈ پہ لٹا دیا وہ ایک گڑیا کی طرح بیڈ پہ لیٹی تھی اور مجھے یوں لگا کہ میری سہاگ رات یہ ہی ہے ا سکا ڈریس مجھے اور بھی ہاٹ کر رہا تھا وہ باذوق لڑکی تھی اس کے انڈر غارمنٹس ہمیشہ بہت بڑھیا قسم کے ماڈرن ہوا کرتے تھے جن کو دیکھ کے ہی لن کھڑا ہو جائے اس کے ہونٹ پے کسسنگ کرنے لگا اور خود اس کے اوپر لیٹ گیا  اور اس کے نرم بھرے نپلز دبانے لگا
آہھحہھھھہ میں نے اسکی چکنے جوانی والے بدن سے کمیز اتار دی اور اسکا لش والا بدن چومنے لگا اسکی  سیکسی جالی نما برا اتار کر اس کے نرم بھرے نپلز منہ میں لے کر اسکو چوسنے لگا  ا سکی جان نکلنے لگی پھر اسکے لش والا بدن میں کسسنگ کرنا پھر سے شروع کر دیا پھر میں نے اسکی جسم سے شلوار اتار کر اپنی ہاتھ کی سیدھی انگلی اسکی چکنی پھدی میں ڈال کر اندر پھر باھر کرنے لگا پھر اپنی انگلی اندر سے نکال کر اسکی چکنی پھدی سہلانے لگا
اور اسکی پھدی کو زبان سے سہلانے لگا  اسکی چکنی جوان ٹانگیں کھول کر دیکھا کیا شاندارچوت کا نظارہ تھا شیو چوت ایک دم اور چوت کے لپس دھیرے دھیرے سسکیاں لے رہے تھے لن کے لیئے چوت کی دیواریں گرم ہو کے نرم ہو چکی تھیں میں نے آرام کے ساتھ زبان کی نول چوت کے لبوں کے اوپری جانب عین دانے کے اوپر رکھ دی اوہ ا سکی سسکی نکلی اور ا سنے تانگٰں سکیڑ لیں میں کہاں رکنے والا تھا مٰں نے زبان کی نوک چوت مٰں گھما کے دالی اس کی پھدی پانی چھوڑنے والی ہو گئی تھی  اور اس کے سبر کا پیمانہ لبریز ہو گیا تھا ا سنے ٹرپ تھی اب لن کی میرا لن درمیانے سائز کا ہے ا سنے پھدی کے سرے پہ سر رکھااور اندر دھنستا گیا
میں زور زور سے جھٹکے مارنے لگا  اس کی سیکسی آوازیں کالی گھر مٰں گونج رہی تھیں اور وہ اپنا سر ادھر ادھر پٹخ رہی تھی میں نے اب پوز بدل کے چدائی لگانی شروع کر دی تھی وہ ڈوگی پوز شوق سے بنواتی تھی ہم دونوں بہت ایک دوسرے میں مدہوش ہو رہے تھے  میں اس پاکستانی لڑکی کی پوری جوانی چوم رہا تھا  میں بار بار اسکی چکنی پھدی میں ہاتھہ لگا رہا تھا اسکو بھی بہت لش والا مزہ آرہا تھا اسکو بھی بہت لش والا مزہ آرہا تھا کچھ دیر میں ہم سکس کرکے فارغ ہو گئے تھے اس کے بعد میں نے اسکو اس کے گھر پہ چھوڑا
اگلے چند ماہ تھ وہ سیکس کراتی رہی  اور پھر نئے سکول کے سیشن کے آغاز کے ساتھ ہی  ا سنے سکول میں آنا بند کر دیا تھا ہمارا سکول ہائیر سکینڈری لیول کا تھا میں سیکنڈ ایئر میں پہنچ چکا تھا لن اور بھےی جوان ہو گیا تھا لیکن ا سلڑکی نے مجھے نا کال کی نا خیر خبر بتائی  نا کبھی معلوم ہوا  وہ کون لوگ تھے کہاں سے تھی کدھر گھر چھوڑ کے شفٹ ہوئے پلیز اگر وہ کہانی پڑھے تو مجھے اسی نمبر پہ کال کرےاور اس کے بعد وہ پاکستانی لڑکی مجھے آج تک نہٰں ملی میرا دل کہتا ہے وہ خیریت سے ہو